ملالہ یوسف زئی- ایک بہادر لڑکی!

Image

سوات میں امن و تعلیم کے لئے سرگرم معصوم اور ہونہار طالبہ ملالہ یوسف زئی پر قاتلانہ حملہ ایک ایسی گھناؤنی کاروائی ہے جسے انجام دینے والوں کو جانوروں سے بھی بدتر درجے پر سمجھنا چاہئے۔ ایک تیرہ سالہ طالبہ سے خوفزدہ عناصر نے جنہیں ملالہ کی صورت میں اپنی فرسودہ اور جاہلانہ سوچ کی موت نظر آتی تھی، اس آواز کو خاموش کرنے کی بزدلانہ کوشش کی۔ملالہ جو اقراء پر یقین رکھتی اور اس پر عمل پیرا ہے، اس نے سوات میں ان عناصر کا بہادری سے مقابلہ کیا جو مذہب کی آڑ لے کر عورتوں کی تعلیم کے خلاف ہیں۔ لڑکیوں کے اسکولوں کو بموں سے اڑاتے ہیں اور علم حاصل کرنے والی لڑکیوں اور خواتین کو ڈراتے دھمکاتے ہیں حتیٰ کہ قتل کرنے سے بھی باز نہیں آتے۔ وہ ایسی سوچ کے حامل ہیں جس میں ہر پڑھی لکھی عورت انہیں بے شرم و بے حیا نظر آتی ہے۔ ان کے مطابق عورتوں کا تعلیم حاصل کر نا اسلامی تعلیمات کے منافی ہے۔ ظاہر ہے کہ پاکستان کا روشن ضمیر اسلام پسند معاشرہ ایسے عناصر کو مسترد کرتا ہے جو ان کے مذہب کی غلط تشریح دنیا کے آگے پیش کرے چنانچہ اپنی جاہلانہ سوچ کو بندوق کی زور پر منوانے والایہ تشدد پسند گروہ کھلی قتل و غارت گری پر اتر آیا ہے،ان کے ہاتھ معصوم و بے گناہ پاکستانیوں کے خون سے رنگے ہوئے ہیں۔ ملالہ یوسف زئی پاکستان اور خصوصاً سوات کی عورتوں کی تعلیم کے لئے جدوجہد کی ایک روشن مثال ہے، قومی ایوارڈ یافتہ معصوم طالبہ اس وقت زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہے۔ حکومت پاکستان اس کی قیمتی زندگی کو بچانے کے لئے ہر ممکن کوشش کرے، اور ایسے عناصر کی سرکوبی کرنے میں کسی مصلحت کا شکار نہ بنے جن کا اصل چہرہ سارے پاکستان نے دیکھ لیا ہے۔

 

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s