اندھی، گونگی اور بہری قوم

By: Ahmad Khan

ڈاکٹر مبارک علی اپنی بائیوگرافی میں لکھتے ہیں جب 1971 میں مشرقی پاکستان میں آپریشن چل رہا تھا اُس وقت وہ برطانیہ میں زیرِ تعلیم تھے- بین الاقوامی ذرائع ابلاغ مشرقی پاکستان کی صورتحال رپورٹ کرتے تھے- انسانی حقوق کی پامالی، قتلِ عام اور جنگی جرائم کی خبریں آتی تھیں اور کوئی پاکستانی اُس پر یقین کرنے کو تیار نہیں ہوتا تھا، اُسے بھارتی و بنگالی پراپگینڈا سمجھا جاتا تھا جسے مغربی ذرائع ابلاغ رپورٹ کرتے تھے- مجید نظامی کی قیادت میں وہاں مقیم پاکستانیوں نے ایک ریلی بھی نکالی جس کے اختتام پر ملی و جنگی ترانے گائے گئے- پھر جب پاکستانی فوج کے سرنڈر کی خبر آئی تب بھی کوئی اُس پر یقین کرنے کو تیار نہیں تھا، پھر بنگلہ دیش کے قیام کی خبر آئی اُس پر بھی کسی کو یقین نہ آیا- کچھ لوگوں نے تو سال دو سال تک اِس خبر کو تسلیم نہ کیا-

ماما قدیر بلوچ اور ان کا مُٹھی بھر قافلہ بلوچستان سے اسلام آباد کی طرف پیدل لانگ مارچ کرتے ہوئے

ماما قدیر بلوچ اور ان کا مُٹھی بھر قافلہ بلوچستان سے اسلام آباد کی طرف پیدل لانگ مارچ کرتے ہوئے

آج جب میں سندھ و بلوچستان کی صورتحال پر پاکستانیوں کے تبصرے دیکھتا ہوں کہ یہاں تو بھارتی ایجنسیاں ملوث ہیں، لاپتہ افراد تو جرائم پیشہ ہیں یا پھر یہ کہ ہماری ایجنسیاں تو کسی کو ہاتھ بھی نہیں لگاتیں، یہ لوگ خود ہی افغانستان اور بھارت بھاگ جاتے ہیں جس پر پیچھے اِن کو لاپتہ افراد ثابت کر کے فوج کے خلاف پروپگینڈا کیا جاتا ہے- جب اجتماعی قبریں دریافت ہوتی ہیں تو کہا جاتا ہے کہ اِن کو ایجنسیوں نے نہیں بلکہ بھارتی ایجنسیوں نے مارا ہے (ایک غیر ملکی ایجنسی آ کر بلوچستان میں اجتماعی قبریں بنا کر چلی جاتی ہے اور ہماری دُنیا کی بزعم خود نمر 1 ایجنسی سوتی رہتی ہے۔ آج بھی وہی 1971 والی ذہنیت نظر آتی ہے، وہاں سے آنی والی خبروں پر یقین نہیں کیا جاتا اور اُسے “پروپگینڈا” اور “سازش” سے زیادہ کوئی اہمیت نہیں دی جاتی-

Advertisements

One thought on “اندھی، گونگی اور بہری قوم

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s